یہاں ہر قسم کی گستاخی کی اطلاع دیں !
گستاخ لنک جمع کرائیں
یہاں گستاخ لنک جمع کرائیں!
ممبر بنئے

٭٭آج کی اچھی بات طریق الحق انٹرنیشنل کے ساتھ٭٭

جس طرح نماز قربِ الٰہی کا ذریعہ بننے والی بہترین بدنی عبادت ہے لیکن ہر عبادت قربِ الٰہی کا ذریعہ تب ہی بنتی ہے جب اس کی روح کو سمجھ کر اسے دل سے ادا کیا جائے۔ نماز کی ایک ظاہری صورت اور آداب ہیں اور ایک حقیقت ہے۔ نما ز کی روح حضوریٔ قلب ہے یعنی تما م دنیاوی رشتوں اور علائق سے ٹوٹ کر صرف اللہ کی طرف متوجہ ہونا۔ اسی طرح اللہ عزوجل کی راہ میں خرچ کرنے کی بھی ایک صورت اور روح ہے اور انفاق فی سبیل اللہ کی روح دنیاوی مال کی محبت سے آزادی ہے جو بے شک تزکیۂ نفس اور تصفیہ ٔ قلب میں اہم ترین کردار ادا کرتی ہے۔ اگر زکوٰۃ، صدقات اور خیرات کی ادائیگی اس کے تمام ظاہری آداب کے ساتھ کی جائے لیکن اس کی روح کو شامل نہ کیا جائے تو فرض کی برائے نام ادائیگی تو ہو جائے گی لیکن نہ قلب کی پاکیزگی میں یہ عبادت کوئی کردار ادا کرے گی اور نہ ہی قربِ الٰہی کا باعث بن سکے گی۔ اگر اللہ کی راہ میں مال کی ادائیگی میں اس کی روح بھی شامل ہو گی تو ہی اس کا حقیقی مقصد اور معنی پورے ہوں گے یعنی پاک ہونا، نشوونما پانا اور بڑھنا۔ اس طرح قربِ الٰہی حاصل ہو گا اور مسلمان مومن بن کر اللہ کی راہ میں خرچ کرنے کے اسرار کو سمجھ کر ضرورت سے زیادہ مال اپنے پاس نہیں رکھے گا۔ صدقات کی ادائیگی سے مال پاک ہوتا اور مزید بڑھتا ہے۔
اللہ تعالیٰ سے دعا ہے اللہ ہمیں زکوٰۃِ شرعی‘ حقیقی، صدقہ، خیرات اور عطیات کی ادائیگی اس کی روح کے مطابق کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ (آمین)
تحریک طریق الحق کا اصول ہے کہ اس میں عام لوگوں سے چندہ وصول نہیں کیا جاتا۔ جن لوگوں کو اللہ تعالیٰ نے توفیق عطا کی ہے وہ خود بخود ہی اور نام نمود سے بے نیاز ہو کر اللہ تعالیٰ کی راہ میں خرچ کرتے ہیں۔ اب عوام الناس سے نفلی صدقات کے حصول کے لیے درخواست کی جا رہی ہے اور آپ کو ہماری امداد دل کے مطمئن ہونے کے بعد کرنی ہے کیونکہ دل کے اطمینان کے بعد کیا جانے والا کام ہی اعلیٰ مراتب کا حامل ہوتا ہے۔ یہ یاد رکھیے کہ تحریک طریق الحق کے کسی شعبہ میں اعانت یا مدد کرنا ’’صدقہ جاریہ‘‘ ہے یعنی آپ کسی بھی شعبہ میں جب اعانت یا امداد کریں گے تو آپکو تحفظ ناموس رسالت کے مشن میں شامل ہو کر جہاد کرنے کا ثواب ملے گا۔ اور یہ اس وقت تک ملتا رہیگا جب تک اس شعبہ ہائے میں کام ہوتا رہیگا یا اس کے اثرات و نتائج باقی رہیں گے۔۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔۔۔۔۔

Leave a Reply